10

نوازفیملی کی درخواست،حکومت نے ایک ہفتے بعد بھی جواب نہ دیا

لاہور(فری ہینڈ نیوز)سابق وزیراعظم نوازشریف، مریم نوازاور کیپٹن(ر) صفدر کی حکومت سے نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست پر ایک ہفتے بعد بھی جواب نہیں آیا۔نوازشریف ،مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر) صفدر نے وفاقی وزارت داخلہ کو نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست دی تھی ،ا س حوالے سے وزارت داخلہ کو4 اکتوبر کو پٹیشن لیٹر بھیجا گیا تھا جس میں نام فوری طور پر ای سی ایل سے نکالنے کے لئے کہا گیا تھا۔شریف خاندان کے ذرائع کے مطابق ایک ہفتہ گزرنے کے بعد بھی وزارت داخلہ نے کوئی جواب نہیں دیا ہے۔آئین پاکستان ہر شہری کو جان ومال کے تحفظ کے ساتھ نقل و حرکت کی آزادی فراہم کرتا ہے، نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ پر ڈالنا وفاقی حکومت کا غیر آئینی اور غیر قانونی اقدام ہے،بد عنوانی ،اختیارات کے ناجائزاستعمال ، دہشت گردی یا سازش جیسے کسی جرم میں ملوث نہیں ہیں۔احتساب عدالت نے بھی نیب کے عائد کردہ بد عنوانی کے جھوٹے الزامات سے بری کیا ،اسلام آباد ہائی کورٹ نے احتساب عدالت کی غیر قانونی سزا کو معطل کردیا، ملک کی کسی عدالت نے بھی نام ای سی ایل پر رکھنے کی ہدایت نہیں دی۔نواز شریف کا موقف ہے کہ وہ احتساب عدالت نمبر2کی اجازت کے بغیر ملک سے باہر نہیں جائیں گے جہاں ان کے خلاف مزید2مقدمات زیر سماعت ہیں، انہوں نے احتساب عدالت میں حاضری کی بھی ضمانت دے رکھی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں