34

پاک بحریہ نے دشمن کو سمندری جارحیت سے روک رکھا ہے،نیول چیف

راولپنڈی(فری ہینڈ نیوز)پاکستان نیوی کی کوسٹل کمانڈ کی سالانہ ایفیشنسی پیریڈ کا انعقاد پی این ایس قاسم، منوڑہ میں ہوا۔ چیف آف دی نیول اسٹاف ایڈمرل ظفر محمود عباسی تقریب کے مہمان خصوصی تھے۔مہمان خصوصی کی آمد پر کمانڈر کوسٹ وائس ایڈمرل محمد فیاض گیلانی نے ان کا استقبال کیا۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مہمان خصوصی نے کہا کہ پاکستان نیوی کی کوسٹل کمانڈ کو جیونی سے لیکر سر کریک تک پھیلی پاکستان کی ساحلی پٹی کی حفاظت کی اہم ذمہ داری تفویض کی گئی ہے جس کو وہ مشکل اندورنی و بیرونی سکیورٹی حالات اور سخت موسمی تبدیلیوں کے ساتھ بخوبی سر انجام دے رہے ہیں، انھوں نے موجودہ بحری چیلنجز بشمول گوادر پورٹ کی سکیورٹی اور سی پیک کے بحری دفاع سے متعلق معاملات سے نبرد آزما ہونے کے لیے پاک بحریہ کے بحری بیڑے کی آپریشنل صلاحیتوں پر اطمینان کا اظہار کیا، اورکہا کہ پاکستان نیوی، ملکی ساحل اور علاقائی سمندر میں اپنی مستعد موجودگی کے ذریعے شر پسند عناصر کی جانب سے کسی بھی قسم کی جارحیت کا موقع فراہم نہیں کر رہی ہے۔نیول چیف نے پاکستان نیوی کے وڑن کے تین ستونوں کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ جنگی تیاری، میری ٹائم سیکٹر کی ترقی اور نظریاتی اساس کے ذریعے ہی ہم اپنے مقاصد حاصل کر سکتے ہیں۔بلو اکانومی اور پاکستان کے بحری وسائل کی اہمیت پرگفتگو کرتے ہوئے نیول چیف نے کہا کہ پاکستان کی معیشت کی بہتری کے لیے میری ٹائم سیکٹر اور اس کی ترقی اور سیکیورٹی پر توجہ مرکوز کرنا ناگزیر ہے۔انھوں نے اس سلسلے میں پاک بحریہ کی کاوشوں کو سراہا جن میں سیمینارز اور نیشنل میری ٹائم سیکیورٹی ورکشاپ کا انعقاد او ر تاجر برادری سے تعلقات استوار کرنا شامل ہیں۔قبل ازیں اپنے خطاب میں کمانڈر کوسٹ وائس ایڈمرل محمد فیاض گیلانی نے کوسٹل کمانڈ کی آپریشنل کامیابیوں پر روشنی ڈالی اور سال 2018 میں کی جانے والی سرگرمیوں کا خلاصہ پیش کیا۔ انھوں نے کہا کہ دیگر آپریشنل ذمہ داریوں کے ساتھ ساتھ کوسٹل کمانڈ نے مشق ’سی اسپارک2018 ‘ میں بھی کامیابی سے حصہ لیا۔ بعد ازاں مہمان خصوصی نے سال 2018 کے دوران بہترین کار کردگی دکھانے والے یونٹس میں شیلڈز تقسیم کیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں