41

18سال تک مولانا فضل الرحمن کشمیر کمیٹی کے ممبر رہے لیکن ہمیشہ انکا کردار کشمیریوں کے حق میں منفی رہا،حاجی جاوید اختر

گجرات (راجہ وقاص علی )18سال تک مولانا فضل الرحمن کشمیر کمیٹی کے ممبر رہے لیکن ہمیشہ اُن کا کردار کشمیریوں کے حق میں منفی رہا ۔ان خیالات کا اظہار گجرات بار کے زیر اہتمام کشمیریوں کی آزادی کے حق میں منعقد کشمیر کانفرنس کے دوران مہمان خصوصی وزیر قانون آزاد جموں کشمیر حاجی جاوید اختر نے وکلاء کمیونٹی سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہاکہ کشمیر کے اندر اس وقت کشمیریوں پر جو ظلم و ستم جاری ہے وہ دنیا سے ڈھکا چھپا نہیں ہیں،کشمیریوں کے حق میں قرار داد ابھی بھی یواین او میں موجود ہے جس کو 70سال ہو چکے ہیں،کشمیری گزشتہ کئی سو سالوں سے بھارتی مظالم برداشت کر رہے ہیں اور آزادی کیلئے ترس رہے ہیں لیکن ان چند سالوں میں کشمیر کی آزادی کی تحریک اس قدر زور پکڑا ہے جس کا دائرہ اب دنیا بھر میں موجود ہیں اور کشمیریوں کے حق میں آواز بلند کر رہے ہیں جس میں لاکھوں شہدا کشمیر کا بہت اہم رول ہے جن شہادتوں سے آج کشمیرکی آزادی کی تحریک نے زور پکڑا ہے ،انہوں نے کہاکہ کشمیرمیں ہماری اپنی ماؤں ،بہنوں،بھائیوں،بزرگوں اور معصوم بچوں پر بھارتی جو ظلم و ستم کر رہے ہیں ،کشمیریوں پر مظالم کیلئے جو بیلٹ گن کا استعمال ہندوستان کر رہا ہے اس کی اجاز ت نہ یو دنیا کا ہومن رائٹس کمیشن دیتا ہے اور نہ ہی اس کی اجازت ہے ،مودی سرکار نے کشمیریوں پر مظالم کی تمام حدیں پار کر دی ہے ،کشمیرنہ تو ہندوستان کا ہے اور نہ ہی ہندستان کو ملے گا یہ پاکستان کی شہ رگ ہے اس کے بغیر پاکستان مکمل نہیں ،انہوں مزید کہاکہ تحریک آزادی کشمیر کے کشمیری نہ تو ہندوستان کے ساتھ رہنا چاہتے ہیں اور نہ ہی اُن سے خوش ہے ،کشمیر کے حق میں مخلص قیادت سے ہی کشمیر آزاد ہوگا ۔آخرمیں انہوں نے وزیر اعظم آزاد جموں و کشمیر راجہ فاروق حیدر کی جانب سے گجرات بار ہال کی تعمیر کیلئے ایک کڑوڑ روپے گرانٹ کا اعلان کیا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں