38

جامعہ گجرات کی اکڈیمک کونسل کا بارہواں اجلاس،ڈاکٹرمحمد فہیم ملک کی صدارت میں حافظ کیمپس میں منعقد ہوا

گجرات(نمائندہ فری ہینڈ نیوز)جامعہ گجرات کی اکڈیمک کونسل کا بارہواں اجلاس وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹرمحمد فہیم ملک کی صدارت میں حافظ کیمپس میں منعقد ہوا۔ اس اجلاس کی معاونت کا فریضہ رجسٹرار ڈاکٹر طاہر عقیل نے سرانجام دیا۔ اکڈیمک کونسل کے اجلاس کے آغاز میں گذشتہ اجلاس کے ایجنڈا کی منظوری دی گئی۔ علاوہ ازیں مختلف تعلیمی، تدریسی وتحقیقی امور کو زیر بحث لاتے ہوئے اکڈیمک کونسل کے تمام اراکین نے اپنے اپنے شعبہ جات کی نمائندگی کرتے ہوئے مدلل و تفصیلی نکات کو اپنی گفتگو کا موضوع بنایا۔ اجلاس میں موجود تمام اراکین نے اس امر پر اتفاق کا اظہار کیا کہ جسمانی طور پر متاثرہ افراد معاشرہ وملک کا اہم حصہ ہیں۔ ان افراد کو اعلیٰ تعلیم کے مدارج سے روشناس ہونے کے مواقع فراہم کرنا جامعاتی ذمہ داری ہے۔ یونیورسٹیوں کیHECرینکنگ میں بھی ان خاص افراد کے جامعات میں داخلہ و تکمیل علم کو خصوصی اہمیت دی جاتی ہے۔ اجلاس میں انجینئرنگ و ٹیکنالوجی کے حوالہ سے انڈسٹریل ایڈوائزری بورڈ کے قیام کا بھی عندیہ دیا گیا تاکہ صنعت و تعلیم کے روابط کو مزید مضبوط بناتے ہوئے نوجوان طلبہ کے لیے تعلیمی افادیت کو یقینی بنایا جا سکے۔ فنانشیل و پلاننگ کمیٹی کے لیے فیکلٹی ممبران کی نامزدگیوں کی بھی منظوری دی گئی۔ جامعہ گجرات کی وژن اسٹیٹمنٹ جو کہ ورلڈ کلاس یونیورسٹی کے قیام کی جانب ایک اہم قدم ہے ، کی بھی منظوری دی گئی۔ جامعہ گجرات کی مختلف فیکلٹیوں و شعبہ جات کے بورڈ آف سٹڈیز میں پیش کردہ تجاویز کو بھی حتمی شکل دینے کی منظوری دی گئی۔ نواز شریف میڈیکل کالج گجرات اورABSTHمیںMD,MSاورFCPSکے مختلف جاری پروگراموں پر عملدرآمد و تکمیل کے لیے لائحہ عمل و حتمی منظوری کے لیے تجاویز کو بھی زیر بحث لایا گیا۔ اجلاس میں فیکلٹی ڈین ڈاکٹر فریش اللہ یوسفزئی، ڈاکٹر فوزیہ مقصود، ڈاکٹر محمد سلیمان طاہر، پروفیسر ڈاکٹر عبدالرحمان،کنٹرولر امتحانات ڈاکٹر محمد دانش سمیت مختلف شعبوں کے ڈائریکٹروں، چیئر پرسن، صدور، کالجوں و سب کیمپسوں کے ڈائریکٹروں، پرنسپلNSMC اور چیف لائبریرین نے شرکت کی۔ اکڈیمک کونسل کے بارہویں اجلاس میں جامعہ گجرات کے مختلف شعبہ جات میں تدریسی امور و معیار کو مزید بہتر بنانے کے لیے تفصیلی بحث کے ذریعے مختلف اقدامات تجویز کیے گئے۔ پروفیسر ڈاکٹرمحمد فہیم ملک نے کہا کہ تعلیمی و تدریسی مراحل کو ارفع مقام سے روشناس کرواتے ہوئے طلبہ کے تعلیمی مستقبل کی حفاظت ایک قومی فریضہ ہے۔ مختلف شعبہ جات کی تعلیمی و انتظامی کارکردگی کو بہتر بناتے ہوئے ورلڈ کلاس یونیورسٹی کے اہداف کو حاصل کیا جا سکتا ہے۔ مارکیٹ کی ضروریات سے مربوط و پیوستہ نظام تعلیم و تربیت کا قیام وقت کا اہم تقاضا ہے۔ تعلیم فروغ ذہن انسانی کا اہم ذریعہ اور ملکی سماجی و معاشی ترقی کا بہترین راستہ ہے۔ انتظامی و تدریسی نظم و ضبط کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے ہم بہترتعلیمی نتائج کے آرزو مند ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں