39

اورماڑہ میں 14 افراد کا قتل‘پاکستان کا ایران سے شدید احتجاج

اورماڑہ(فری ہینڈ نیوز)پاکستان نے اورماڑہ میں شہید ہونے والے 14 افراد کے قاتلوں کے خلاف کارروائی نہ کرنے پر ایران سے شدید احتجاج کیا ہے۔وزارت خارجہ نے اس سلسلے میں اسلام آباد میں ایرانی سفارت خانے کو احتجاجی مراسلہ بھیجا ہے۔احتجاجی مراسلے میں کہا گیا ہے کہ اورماڑہ میں پاکستانیوں کو شہید کرنے والے پاک ایران سرحد کے قریبی علاقے سے آئے اور فرار ہوکر اسی علاقے میں روپوش ہو گئے۔وزارت خارجہ کے مطابق اس افسوس ناک واقعے کی ذمہ داری کالعدم تنظیموں کے ایک گروپ نے قبول کی، جس کے خلاف کارروائی کے لیے پاکستان نے پہلے بھی ایران سے کئی بار مطالبہ کیا۔احتجاجی مراسلے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ پاکستان نے ایرانی علاقے میں اس گروہ کی کمین گاہوں، تربیتی کیمپس، لاجسٹک کیمپوں کی اطلاعات اور شرپسند سرگرمیوں کی تفصیلات پہلے بھی تہران کو بھیجیں، افسوس کے ساتھ کہا جاتا ہے کہ ایران نے اب تک ان گروہوں کے خلاف کوئی ٹھوس کارروائی نہیں کی۔واضح رہے کہ 18 اپریل کو بلوچستان میں اورماڑہ کے قریب مکران کوسٹل ہائی وے پر دہشت گردوں نے فائرنگ کر کے 14 افراد کو قتل کر دیا تھا۔دہشت گردوں نے مسافروں کو شناخت کے بعد بس سے اْتارا ، ان کے ہاتھ پیر باندھ کر انہیں قتل کیا۔ترجمان دفترخارجہ کے مطابق وزیراعظم عمران خان کل سے ۱یران کا 2 روزہ دورہ کریں گے جس کے دوران وہ ایرانی صدر اور دیگر اعلیً قیادت سے ملاقاتیں کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں