25

ٹیکنیکل کمپنیوں پر فرانس کے پلانٹ ٹیکس کی تحقیقات کا حکم

امریکہ(فری ہینڈ‌نیوز) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ٹیکنیکل کمپنیوں پر فرانس کے پلانٹ ٹیکس کی تحقیقات کا حکم دے دیا، یہ ایک نئی تحقیق ہے جو امریکا پر ٹیرف یا دیگر تجارتی پابندیاں عائد کر سکتی ہے۔ امریکی تجارتی نمائندے کا کہنا ہےکہ ایک تحقیق کے مطابق ’امریکا کو بہت اندیشہ ہے کہ کل فرانسیسی سینیٹ ٹیکس بل منظور کر لے گی جس میں ڈیجیٹل سروس ٹیکس امریکی کمپنیوں کا اہداف ہے۔ لہٰذایہ نیا قانون شبِ خون مارنے کے مترادف ہو سکتا ہے‘اندیشہ ہے کہ فرانس کی ڈیجیٹل ٹیکس کی منصوبہ بندی امریکی ٹیکنالوجی کمپنیوں کو نقصان پہنچائے گا۔’سیکشن 301‘ کی تحقیقات اس بات کا تعین کرے گی کہ لیوی ایک غیر منصفانہ تجارتی عمل کا حامل ہے۔ پہلے تجزیہ کار نے بڑے تجارتی طیارے پر چین کے تجارتی طریقوں اور یورپی یونین کے سبسڈیز کا احاطہ کیا۔ ٹرمپ نے کہا کہ ہم نے ہدایت کی ہے کہ ہم اس قانون سازی کے اثرات کی تحقیقات کریں اور اس بات کا تعین کریں کہ آیا وہ غیر ملکی یا غیر ذمہ دار ہے اور ریاست ہائے متحدہ کے تجارت کو محدود کر دیتا ہے۔ اسی سلسلے میں میئر نے کہا کہ ٹیکس 30 سے زائد کمپنیوں، زیادہ تر امریکی بلکہ چینی، جرمن، ہسپانوی اور برطانوی اور ایک فرانسیسی فرم اور فرانسیسی کمپنیوں کو ہدف بنائے گا۔ جنہیں غیر ملکی کمپنیوں کی طرف سے خریدا گیا ہے۔ٹیکس کی کل سالانہ آمدنی کم سے کم 750 ملین یورو کمپنیوں کو متاثر کرے گی اور ڈیجیٹل کاروباری اداروں سمیت آن لائن ایڈورٹائزنگ پر لاگو ہوگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں