23

اغواء کا مقدمہ، لڑکی کا والدین کیساتھ جانے سے انکار

لاہور(فری ہینڈ نیوز) لاہور ہائی کورٹ میں اغواء کے مقدمے کی سماعت کے دوران 22 سالہ لڑکی نے اپنے والدین کے ساتھ جانے سے انکار کر دیا۔ لڑکی کے انکار کے بعد فریقین احاطۂ عدالت میں ایک دوسرے سے گتھم گتھا ہو گئے، عدالت نے لڑکی کو سہیلی کے ساتھ بھجوا دیا۔لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس شہرام سرور نے شہری مبین احمد کی درخواست پر سماعت کی جس نے مؤقف اختیار کیا کہ اس کی بیٹی عمائمہ کو ساندہ کی ایک لڑکی نے اغوا کر رکھا ہے۔ مبین احمد نے اپنی درخواست میں استدعا کی کہ واقعے کا مقدمہ بھی درج ہے، بیٹی کو بازیاب کروایا جائے۔ سماعت کے بعد لڑکی نے اپنے والدین کے ہمراہ جانے سے انکار کر دیا جس پر فریقین احاطۂ عدالت میں گتھم گتھا ہو گئے۔ ہائی کورٹ کی سیکیورٹی نے لڑکی کے والدین اور بھائی کو حراست میں لے لیا، جبکہ عدالت نے لڑکی کو اس کی سہیلی کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں