43

پاکستان کے مؤقف کی تائید پر چین کا شکریہ، فردوس عاشق

سیالکوٹ(فری ہینڈ نیوز) وزیر اعظم عمران خان کی معاونِ خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان کہتی ہیں کہ چین نے ایک بار پھر مسئلہ کشمیر پر پاکستان کی حمایت کر کے ثابت کیا کہ وہ حق اور سچ کے ساتھ ہے، مظلوم کشمیریوں کی حمایت میں پاکستان کے مؤقف کی تائید پر چین کا شکریہ۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں انہوں نے وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی کے کامیاب دورۂ چین پر ردِ عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے مابین دوستانہ اور قریبی تعلقات کا تقاضہ تھا کہ پاکستان اپنے دوست کو بھارتی وزیرِ اعظم مودی کے سیاہ اقدام پر اعتماد میں لے۔ فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ چین دنیا کی ابھرتی ہوئی طاقت ہے، مظلوم کشمیریوں کی حمایت میں پاکستان کے مؤقف کی تائید پر سدا بہار دوست کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دنیا خطے کو پر امن بنانے کے لیے وزیرِ اعظم عمران خان کی سوچ کے ساتھ کھڑی ہے، جس کا واضح ثبوت چین کا پاکستان کی حمایت پر دو ٹوک مؤقف ہے، پاکستان ایک ذمہ دار ریاست کے طور پر بین الاقوامی قوانین اور اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کے حل کا منتظر ہے۔ وزیر اعظم کی معاون خصوصی نے مزید کہا کہ یو این کے سیکریٹری جنرل کا دو ٹوک بیان کہ بھارت کشمیر کی حیثیت بدلنے سے باز رہے پاکستان کے مؤقف کی ترجمانی ہے، مسئلہ کشمیر کا حل سلامتی کونسل کی قراردادوں کے تحت ہونا چاہیے، مودی کا اقدام جمہوریت اور بین الاقوامی قوانین پر کھلا حملہ ہے، یہ اقدام ثبوت ہے کہ وہ جمہوری روایات پر یقین نہیں رکھتے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ صرف مسلمان آبادی والی ریاست کا اسپیشل اسٹیٹس ختم کرنا اس بات کا ثبوت ہے کہ ہٹلر مودی انتہا پسندانہ سوچ کو پروان چڑھایا جا رہا ہے، مودی کے غیر قانونی اقدام نے بھارت کے خود ساختہ الحاق کی دستاویز کو غیر مؤثر کر دیا، کشمیر آج 26 اکتوبر 1947ء کی پوزیشن پر آ گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں