166

کوٹلہ میں امن چاہیے،والد کی وراثتی جائیداد کی تقسیم کیلئے تیار ہوں،چوہدری عابد رضا کوٹلہ

کوٹلہ ارب علی خان (نمائندہ فری ہینڈ نیوز) ایم این اے چوہدری عابد رضا نے سانحہ کوٹلہ کے حوالہ سے پرہجوم پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ جس جائیداد کےلئے بے گناہوں کا قتل کیا گیا ہے اس جائیداد میں ان کا حصہ صرف پانچ دکانیں ہیں اور میں ابھی نہیں اس سے پہلے بھی بار ہا کہہ چکا ہوں کہ میں ان حصہ ہی نہیں بلکہ ان کا کرایہ بھی جو اب تک بنتا ہے وہ دینے کے لئے تیار ہوں ۔ مگر کوئی آج تک میرے پاس نہیں آیا اور جن دکانوں کے لئے فائرنگ کر کے بے گناہوں کو قتل کیا گیا اس سے ان کا کوئی تعلق نہیں ہے کیونکہ وہ دکانیں حاجی عبدالخالق ہمارے بڑے بھائی کے نام ہیں یہ انہوں نے خود خریدی تھیں 1976میں اس کی رجسٹری بھی انہی کے نام پر ہے ۔ مگر ان ظالموں نے ہماری ایک نہیں سنی اور کوٹلہ کو خون میں نہلا دیا ، میں اس سے پہلے بھی کہہ چکا ہوں کہ 2008 سے لے کر آج تک ان کا کرایہ میرے پاس امانت ہے کسی بھی پنچائیت کے سامنے فیصلہ کر لیں جو کچھ ان کے حصہ کا ہوگا میں دینے کے لئے تیار ہوں اگر اس میں میرا کچھ نقصان ہوا تو بھی برداشت کرلوں گا دوئیاں خاندان سے ہماری دشمنی کے وقت کے وہ بھی گندے ہاتھ اور لوگ ہیں جو کوٹلہ کا امن تباہ کرنے کی طرف گامزن ہیں جب میں ایم این اے بنا ہوں میں نے علاقہ کی تعمیر و ترقی اور امن و امان کی کوشش کی اور جتنا پر امن میرا علاقہ تھا اس پورے گجرات میں کوئی حلقہ نہیں ہوگا کوٹلہ کے سیاستی کھلاڑی آج بھی اس پرامن فضاءکو تباہ و برباد کرنا چاہتے ہیں میں ان تعنقید کرنے والوں کو کہتا ہوں کہ تنقید کی بجائے میرے پاس آﺅ اور اگر میں مجرم ہوا تو میں یہ گھر اور سیاست چھوڑ دونگا ۔ میں کوٹلہ پریس کلب کے تمام صحافیوں کا شکر گزار ہوں کہ انہو ں نے باوجود بہت زیادہ پریشر کے مثبت صحافت کی ہم مزید کوٹلہ کے امن کو خراب نہیں ہونے دیں گے ۔ان کا مقصد صرف تخت پر قبضہ کرنا ہے اس سے بڑا ظالم کون ہوگا کہ جو اپنے دکانداروں پر ڈنڈے برسائے کسی بھی سوسائٹی کے لوگ ، وکلاء، دانشور ، علماء، صحافی یا دیگر کوئی بھی پنچائیت بٹھا لیں جو ان کا جائیداد میں حق ہے میں ان کو دوں گا اگر اس میں سے ایک پائی بھی میں رکھوں تو مجرم ہونگا ان کا خدارا کوٹلہ کے امن کو تباہ ہونے سے بچایا جائے میں گھناﺅنی سازش کے تحت کوٹلہ اور گرد و نواح کے امن کو تباہ نہیں ہونے دوںگا ۔ کوٹلہ غم میں ڈوبا ہے خدا را سب تاجر اپنی دکانیں کھولیں آپ کو کچھ نہیں ہوگا کوٹلہ کے امن کے لئے مجھے اپنی جان بھی قربان کرنی پڑی تو میں دریغ نہیں کرونگا میں اس سانحہ میں مرنے والوں کے خاندان کی جتنی ہو سکی ان کی امداد کرونگا پولیس اپنا کردار ادا کرے اور کوٹلہ کے امن کو بچایا جائے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں