38

آئل کمپنیوں کیخلاف کارروائی درست قرار دینے کا فیصلہ چیلنج

اسلام آباد(فری ہیںڈ نیوز) ملک میں پیٹرول کی قلت کے خلاف حکومتی اقدامات کے معاملے میں ایک آئل کمپنی نے حکومت کی آئل کمپنیوں کے خلاف کارروائی کو درست قرار دینے کا عدالتی فیصلہ چیلنج کر دیا۔ آئل کمپنی نے حکومت کو کارروائی سے روکنے کے لیے انٹرا کورٹ اپیل دائر کرتے ہوئے اسلام آباد ہائی کورٹ کے سنگل بینچ کا فیصلہ چیلنج کر دیا۔ اسلام آباد ہائی کورٹ نے حکومت کی آئل کمپنی کے خلاف کارروائی درست قرار دی تھی۔ آئل کمپنی نے سیکریٹری پیٹرولیم، اوگرا، فیول کرائسز کمیٹی اور ایف آئی اے کو اپیل میں فریق بنایا ہے۔ انٹرا کورٹ اپیل میں استدعا کی گئی ہے کہ 25 جون کے سنگل بینچ کے فیصلے میں قانونی تقاضے پورے نہیں کیے گئے، سنگل بینچ کا فیصلے کالعدم قرار دیا جائے۔ آئل کمپنی نے استدعا کی ہے کہ ایف آئی اے کو کارروائی سے روک کر فیول کرائسز مینجمنٹ کمیٹی کو غیرقانونی قرار دیا جائے، فیول کرائسز کمیٹی کی تشکیل اور اقدامات کو کالعدم قرار دیا جائے۔ پیٹرول کی قلت کے بعد ذخیرہ اندوزی کے خلاف ایف آئی اے نے کارروائی شروع کی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں